Recent Updates
  • Like
    Love
    4
    2 Comments 0 Shares 711 Views
  • Like
    Love
    5
    4 Comments 0 Shares 720 Views
  • جمعہ کی نماز کے بعد پولیس بغیر ماسک بچوں کو گاڑی میں ڈال رہی تھی جس گاڑی میں کورونا نیہں لگ سکتا کم از کم تعداد ٩ کی ہو گی اسی دوران ایک بچہ جو حاضر سروس اور نہایت قابل احترام چئیرمین احتساب بیورو سردار نعیم احمد شیراز صاحب کا بیٹا ہے جو مسک پہنے ہوے تھا وڈیو بنانے پر وحشیانہ انداز میں مارا گیا موقعہ پر موجود ڈی سی حمید کیانی اور ان کے سامنے یاقوب اور ان کے ساتھ ٤ سپائیوں نے مل کر عثمان نعیم کو وحشیانہ انداز میں سب نمازیوں کے سامنے مارا اور دھمکیاں دی اور زور آزمائی کر کے پولیس کی گاڑی میں ڈالنا چاہا جس پر نمازی حضرات نے ان درندوں سے بچے کو بچا یا ویڈیو بنانا ایک عام شہری کا حق ہے. اس پر وزیراعظم فاروق حیدر صاحب سے درخواست ہے کہ واقعہ کا دو طرفی نوٹس لیا جائے اور مسجد کے اوپر لگے کیمرے کی ریکارڈنگ نکلوائ جاۓ اور وردی میں ملبوس درندوں کو اپنی وردی کا ناجائز استعمال کرنے پر معتل کیا جاۓ
    Like
    Love
    Sad
    4
    0 Comments 0 Shares 781 Views
  • Like
    Love
    5
    1 Comments 0 Shares 845 Views
More Stories